اگر فیصلہ نواز شریف کے خلاف آیا تو قبول کرنے کی بجائے کیا ، کیا جائے گا؟

pmln.jpg

پانامہ کیس کے فیصلے کے حوالے سے مسلم لیگ (ن) کے اندرونی ذرائع نے کہا ہے کہ مسلم لیگ (ن) کے مرکزی رہنما اس بات پر متفق ہیں کہ اگر نواز شریف کیخلاف فیصلہ آجاتا ہے تو وہ اس فیصلے کو تسلیم نہیں کریں گے اور بھرپور سیاسی رد عمل دیں گے۔ نجی ٹی وی (ڈان) کی رپورٹ کے مطابق مخالف فیصلے کی صورت میں (ن) لیگ کے اندر دو دھڑے ہیںجن کے دو مختلف نقطہ نظر پائے جاتے ہیں جس میں پہلا یہ ہے کہ قبل ازانتخابات کی طرف جایا جائے۔پاکستان مسلم لیگ ن کا دوسرا گروپ قبل از انتخابات کا مخالف ہے، کہتے ہیں کہ ‘فیصلہ جو بھی آئے ہمیں اپنی مدت پوری کرنی چاہیے اور پارٹی کو وزیراعظم نواز شریف کی تبدیلی کی طرف جانا چاہیے۔دوسری جانب پاکستان مسلم لیگ نواز کے اراکین اسمبلی نے لاہور شہر میں وزیراعظم نواز شریف کے حق میں بینرز آویزاں کردیے ہیں۔پاکستان مسلم لیگ کے مختلف رہنما چاہتے ہیں کہ عدالت ان کے قائد کو پناما کیس میں کلین چٹ دے اور اگر ان کے قائد کے خلاف فیصلہ دیا تو لوگ اس کو قبول نہیں کریں گے۔

انتطامیہ اُردو صفحہ

انتطامیہ اُردو صفحہ

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Top