سمندروں کاپانی نمکین کیوں ہوتاہے ؟

Samander-ka-pani-namkeen-kyu.jpg

سورج طلوع ہوچکاتھا. ہم ساحل سمندر پرپہنچ گئے.خنک ہواؤں میں تیرتے آوارہ بادلوں کاحسین منظرخاصا دلکش تھا.تاحدنگاہ پھیلا سمندرمیری سوچ کامحوربن گیا

سمندرکاپانی کھارا یانمکین کیوں ہوتاہے. سمندری مدوجزرکےپیچھے آخرکیاحکمت پوشیدہ ہے ?
پہلے ہم عام ساتجزیہ کرتے ہیں. بارش اوربرف کاپانی جب مختلف جنگلی پہاڑی راستوں سےگزرتاہے. اپنے راستے میں آنے والی معدنیات کیمیات شامل کرلیتاہے. جو مختلف جھیلوں دریاؤں کاسفرطےکرکےسمندر میں جاگرتے ہیں. مدوجزر کےتسلسل سے پانی ہوامیں اڑجاتاہے. جبکہ نمکیات سمندرکاحصہ بن جاتی ہیں. کروڑوں سال سے یہ سلسلہ جاری ہے. دنیاکاسب سے نمکین ترین سمندربحیرہ مردارکےنام سےمشہور ہے. اس کے بعدگریٹ سالٹ لیک نامی جھیل کانمبرآتاہے. ان مقامات کاپانی عام سمندری پانی سے دس گنازیادہ نمکین ہے.

لیکن سوال یہ ہے کہ خدا نے اتنےبڑے سمندروں کو نمکین کیوں کررکھاہے. اسی غرض سے میں نے ایک تجربہ کیاجس کی تفصیلات درج ذیل ہیں

میں نے پانی سےبھرے دوٹب دھوپ میں رکھ دیے. ایک ٹب میں دوکلو نمک ڈالا. دوسرےمیں ایک کلوچینی ڈالی. دوسرے دن شام کودیکھاتو میٹھاپانی سبزی مائل اورمچھروں کی آماجگاہ بن چکاتھا.جبکہ نمکین پانی قدرےبہترتھا. میں نے اسی تجربہ کو دوبارہ دہرایا لیکن اس بارپانی کومسلسل حرکت میں رکھا. دوسرے دن پانی کاٹیسٹ کروایا تو نمکین پانی بالکل ٹھیک تھا. جبکہ میٹھاپانی خراب ہوچکاتھا. نمکین پانی فلٹرکرکے دوبارہ قابل استعمال کرلیاگیا. اس تجربہ کےبعد خدائی حکمت عملی بخوبی سمجھ آگئی.

اگرسمندروں کاپانی میٹھاکردیاجاۓ. مدوجز کاسلسلہ روک دیاجاۓ تو سمندری پانی خراب ہوکرتعفن زدہ فضاچھوڑے گاجس سے دنیاکے تمام لوگ مہلک بیماریوں کاشکارہوجائیں گے. نظام زندگی معطل ہوجاۓ گی. سائنسی تحقیق کے مطابق نمکین پانی سمندری حیات کالازمی جزو ہے. علاوہ ازیں سمندری نایاب جڑی بوٹیاں اور قدرتی ذخائرنمکیات کی بدولت پرورش پاتے ہیں. سونے چاندی کی طرح قیمتی سمندری پودا ” مرجان ” نمکیاتی جزئیات پرپروان چڑھتا ہے. نمکین پانی سمندری دنیامیں روح جیسی اہمیت رکھتا ہے

رب کریم نے سینکڑوں سال بعد بھی پانی کوصحیح سالم رکھنے کیلۓ چار طرح کاانتظام فرمایاہے

1 پانی کو بخارات بناکرجراثیم سے پاک کیاجاتا ہے. بادلوں کے توسط سے دور دراز علاقوں میں پانی کی طلب پوری کی جاتی ہے نیز وہاں زمینی پانی کا بیلنس بھی برابرکیاجاتا ہے

2 تیز ہواؤں کے ذریعے پانی کی نیچلی سطح کو اوپرلایا جاتا ہے. جس سے خلائی بھنور پیدا ہوتے ہیں. جسے پرکرنے کیلۓ اوپری پانی نیچے چلا جاتا ہے.

3 سمندر میں مخصوص راستے ہیں. دونوں طرف پانی ساکت ہوتا ہے جبکہ درمیان میں ایک راستہ بن جاتا ہے جہاں سے پانی کا ایک حصہ نہرکی صورت بہتہ ہوا دوسری جگہ منتقل ہوجاتا ہے. اسے بحری ” رو ” کہتے ہیں.

4 کشش ثقل اور کشش قمرکے ذریعے پانی کومسلسل حرکت میں رکھا جاتا ہے. جس سے پانی کی تازگی برقرار رہتی ہے.
بےشک اللہ بہترحکمت والا ہے

ایم عمران ادیب

ایم عمران ادیب مصنف ہیں

loading...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Top